خورشید ملت کے-ایچ خورشید کی نذر

  ظہیراحمدمغل

وفائوں کا ثمر خورشیدِ ملت
دعائوں کا اثر خورشیدِ ملت

وہ آزادی کا متوالا، وہ سرخیل
وطن کا راہبر خورشیدِ ملت

کہ چھائے تھے غلامی کے اندھیرے
اندھیروں کی سحر خورشیدِ ملت

زمانے کے خدائوں سے وہ لڑتا
وہ باہمت، نڈر خورشیدِ ملت

بہت تھیں خوبیاں بخشیں خدا نے
سراپائے ہنر خورشیدِ ملت

وہ امن و آشتی کا اک معلم
وطن کا معتبر خورشیدِ ملت

ظہیرؔ اس دور میں ظلمت نہ ہوتی
طلوع ہو پھر اگر خورشیدِ ملت