سیدہ بابرہ رضوی  

سیدہ بابرہ رضوی قومی اخبارات کے ساتھ وابستہ رہیں -آپ نے اپنے قلم کے ذریعے معاشرے کے مظلوم طبقات کے حقوق کو اجاگر کیا ۔ آپ کی دو تصانیف ” رخ شناسائی ” اور ” انکشاف ” منظر عام پر آ چکی ہیں ۔ آپ ایک حساس طبیعت کی مالک ، درد دل رکھنے والی اور سلجھی ہوئی شخصیت تھیں ۔  ملک کے صحافتی اور ادبی حلقوں میں انھیں احترام اور محبت سے یاد کیا جاتا ہے -کینسر جیسےمہلک مرض میں مبتلا ہونے کے باوجود اپنی صحافتی و ادبی سرگیوں کو متاثر نہ ہونے دیا اور اس مرض سے لڑتی ہوئی اس دنیا فانی سے چل بسی ۔ مرحومہ کی تصانیف ان کے اعلی ذوق  اور انسانیت نوازی کی مثال ہیں

(یہ تعارف شبیر احمد ڈار نے مرتب کیا ہے )