پریس فار پیس

پائیدار انسانی ترقی

ماحولیاتی آلودگی، بے روزگاری، غربت، بھوک اور افلاس، ناخواندگی، ناانصافی، استحصال اور جنسی تشدد وغیرہ ایسے مسائل ہیں جن سے دُنیا کا ہر ملک نبردآزما ہے۔

ہمارا مشن پوری دنیامیں بالعموم اور بالخصوص ریاست جموں وکشمیر کی تمام اکایؤں میں پائیدار انسانی ترقی اور محفوظ طریق زندگی کے لیے موافق ماحول کا قیام ہے جس کاحصول افراد،طبقات اور اداروں کو مطلوبہ علم،پیروکاری اور تحقیق و تربیت کی فراہمی کے ذریعے ہی ممکن ہے۔

کشمیر میں انسانی حقوق کے مکمل تحفظ کی ضرورت ہے، پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کر سکتے ہیں. پائیدار ترقی کے اہداف حاصل کرنے سے امن، خوشحالی اور انسانی حقوق کی پاسداری عمل میں آئے گی جو آنے والی نسلوں کے مستقبل کے لئے انتہائی اہم ہے۔




پی ایف پی مستقل امن ہم آہنگی اور دائمی مسرت پر مبنی ایک منصفانہ معاشرے کی خواہشمند ہے۔

پریس فار پیس پائیدار انسانی ترقی ،دیرپا امن اور ہم آہنگی کے فروغ کے لیے کوشاں غیرمنافع بخش،غیر سرکاری تنظیم اور ہر قسم کے امتیازات سے ماورا ادارہ ہے ۔ اگرچہ ادارے کے بانیوں میں بیشتر ذرائع ابلاغ سے وابستہ تھے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ وکلاء، ماہرین تعلیم،ٖخواتین ، نوجوان اور دیگر متحرک شعبوں کے لوگ شامل ہو چکے ہیں جو رنگ،نسل،مذہب،علاقہ اور دیگر امتیازات سے پاک معاشرے کے حصول کے لیے اپنے حصے کی شمع جلانے کا عزم رکھتے ہوئے ہم خیال اداروں،تنظیموں اور افراد سے مل کرہمہ گیرسماجی تبدیلی کے سفر میں مصروف عمل ہیں۔




آزاد کشمیر میں خواتین کے حوالے سے خاصے مسائل دیکھنے میں آتے ہیں، صحت ، تعلیم اور خصوصاً لڑکیوں کی جبری شادی کے واقعات یہاں عام ہیں۔ صحت کے مسائل اس علاقے میں بہت زیادہ ہیں خصوصاًحاملہ خواتین کو غذائی ضروریات کے حوالے سے شعور و آگہی نہ ہونے کے برابر ہے

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی 2010کی قرارداد کے مطابق صاف، محفوظ پانی کی فراہمی اور گندے پانی کی نکاسی بنیادی انسانی حقوق میں شامل ہیں۔ پانی زندگی کا جز لاینفک ہے۔اس کے بغیر کسی قسم کی انسانی، حیوانی، زرعی یا صنعتی سرگرمیاں ناممکن ہیں۔

اسلام ریلیف اور اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال یونیسف کے اشتراک سے وادی نیلم کی تین یونین کونسلوں کنڈالشاہی ،شاہکوٹ اور دودنیال میں صحت و صفائی کے حوالے سے اپ سکیلنگ رورل سنیٹیشن پروجیکٹ تحت سکولوں میں دیہاتوں میں منصوبہ بندی کے تحت کام جاری ہے.جس پروجیکٹ کا مقصد ان تین یونین کونسلوں کے تمام دیہاتوں کو انسانی فضلے سے پاک قرار دینا تمام گھروں کے ساتھ بیت الخلا کی تعمیر اور سنیٹیشن کمیٹیاں قائم کر کے سکولوں کے بچوں اور عوام کے اندر صحت و صفائی کا شعور بیدار کرنا ہے

پریس فار پیس میں کام کرنے والے ایک با صلاحیت نوجوان عتیق الرحمٰن جو پوسٹ گریجویٹ کالج میں طالبعلم بھی تھے کے بارے میں ان ہی کے ایک ساتھی اس مغالطہ میں رہے کہ شاید مظفر آباد کے گلی کوچوں میں خبریں اکٹھی کرنے کا کام سر انجام دے رہے ہیں لیکن بعد میں پتہ چلا کہ وہ بھی کئی دیگر طالب علموں ساتھیوں سمیت گریجویٹ کالج ی عمارت کے نیچے دب کر شہید ہو چکے ہیں ۔پرسی فار پیس کے باقی نوجوان زلزلہ کے فوراً بعد اپنے کام کے ساتھ ریسکیو و ریلیف کے کام میں لگ گئے اور جس طرح امداد کے لیے آنے والی این جی اوز اور رضا کار تنظیموں کے ساتھ مل کر گراں قدر خدما ت سرانجام دیتے رہے اس حوالے سے ان کی جتنی بھی تعریف کی جائے وہ سورج کو چراغ دکھانے کے مترادف ہے۔

آٹھ اکتوبر کے نقوش سے اقتباس

پریس فار پیس کے کو آرڈینیٹر کو آر ڈی نیٹر امیر الدین مغل نے بتایا کہ وہ زلزلے کے وقت اپنے آفس میں کام کر رہے تھے دیوار گرنے سے ان کے سر پر شدید چوٹ آئی جس کی وجہ سے ان کو اسلام آباد لے جایا گیا وہ زخمی حالت میں اپنے ارد گرد کی تباہی کو بے بسی سے دیکھتے رہے اور اس بات پر شدید افسوس کا اظہار کرتے رہے کہ وہ اس مشکل وقت میں ان لاکھوں انسانوں کے کام آنے سے قاصر ہیں ۔لیکن علاج سے واپسی کے ساتھ ہی انھوں نے دوبارہ اپنا کام شروع کر دیا اور تمام علاقوں تک کی رپورٹس قومی اور بین الاقوامی اخبارات ،رسائل اور الیکٹرانک میڈیاتک پہنچاتے رہے جس سے بحالی کے کام میں تیزی آئی



زلزلے کے بعد پریس فار پیس کے رضا کاروں کے جذبہ خدمت کو سلام

پریس فار پیس کے رضا کار جناب نجم الاسلام دار بقا کو چل بسے

پریس فار پیس اس سانحے پر گہرے رنج غم کا اظہار کرتی ہے-مرحوم سراپا محبت اور مجسم شرافت تھے اورپریس فار پیس کے ایک قابل اعتبار اور فعال رضا کار تھے وہ سماجی اور تحریکی سرگرمیوں میں بھی متحرک کردار ادا کرتے رہے ۔ پریس فار پیس کی سرپرست بیگم تنویر لطیف اور دیگر ذمہ داران امیر الدین مغل، اورنگ زیب جرال ، یوسف کشمیری ، عمران گیلانی اور ظفراقبال نے ایک مشترکہ بیان میں جناب نجم الاسلام کی ناگہانی وفات پر گہرے رنج غم کا اظہار کیا ہے ۔ تعزیتی بیان میں مزید کہا گیا کہ قرآن و حدیث کی ترویج کی جہد و جہد سے وابستہ خاندان اور تحریک کے تما م افراد کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور مرحوم کے درجات کی بلندی کے لیے دعا گو ہیں -اللہ پاک مرحوم کی آخری منزلیں آسان فرماۓ اور تمام لواحقین کو صبر کی تو فیق دے


فروغ مطالعہ مہم

باغ.پریس فارپیس کے زیر اہتمام فروغ مطالعہ کے سلسلہ میں ضلعی کو آرڈنیٹر سید عمران حمید گیلانی طلباء و اساتذہ میں کتب تقسیم کر رہے ہیں یاد رہے لوگوں میں کتب بینی کا ذوق پیدا کرنے اور کتابوں سے تعلق جوڑنے کیلئے پر یس فار پیس نے فروغ مطالعہ کے نام سے مہم شروع کر رکھی ہے جسے علمی و ادبی حلقوں اور سول سوسائٹی میں زبردست پذیرائی مل رہی ھے۔