وزیراعظم پاکستان کی مظفرآباد آمد پر سول سوسائٹی کا احتجاج

posted Aug 6, 2012, 11:57 AM by PFP Webmaster   [ updated Aug 6, 2012, 12:08 PM by PFP Admin ]

مظا ئرین نے سوال اٹھایا کہ اگرپاکستان میں 1973کے آئین میں اٹھارہویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو بااختیار بنایا جا سکتا ہے تو آزادکشمیر کے آئین میں ترمیم کے ذریعے ایسا کیوں نہیں کیا جاتا۔ یاد رہے کہ آزادکشمیر کے عبوری آئین کے مطابق وزیراعظم اے جے کونسل کے سربراہ ہیں جن کے پاس ایسے ا ختیا رات ہیں جن پر آزادکشمیر کے لوگوں میں حالیہ عرصے میں نارضگی کا اظہار کرنا شروع کیا ہے کیونکہ وزیراعظم نے مداخلت کرکے احتساب بیورو کے سربراہ کو ہٹا دیا جس نے بعض کرپشن کیسز میں کچھ بڑے افسران کے خلاف کاررواٰئی کی تھی۔
مظاہرہ میں صحافی ، تاجر، طلباء ، وکلاء اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ شامل تھے مظاہرین نے کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر آزادکشمیر کے عبوری آئین میں ترمیم ، کشمیر کونسل کے خاتمہ اور پاکستان کے زیر اھتمام کشمیر میں مقامی حکومت کے ا ختیارات کی بحالی کے حق میں نعرے درج تھے احتجاجی مظاہرہ سینٹرل پریس کلب سے شروع ہو کر ڈسٹرکٹ کمپلیکس دفاتر سے ہوتے ہوئے اختتام پذیر ہو گیا ۔احتجاجی مظاہرین سے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر رضا علی خان سول سوسائٹی فورم کے مرکزی رہنما ء سینئر صحافی طارق نقاش نے خطاب کیا اور سرکردہ رہنماء  زاہدامین ، خالد مغل ، راجہ طارق بشیر، شوکت گنائی ۔ پریس فار پیس کے ڈائریکٹر راجہ وسیم نے بھی شرکت کی۔

مظا ئرین نے وزیراعظم پاکستان کا بحیثیت چیئرمین اے جے کے کونسل کےاختیا رات کا استعمال  خود آئین پاکستان کی خلاف ورزی قرار دیا 

اس احتجاجی مظاہرے کی اپیل سول سوسائٹی فورم نامی ایک غیرسرکاری تنظیم نے سوشل میڈیاکے ذریعے کی تھی جو اس علاقے میں ایک پہلی کوشش بتا ئی جاتی ہے۔ مظا ئرین نے وزیراعظم پاکستان کا بحیثیت چیئرمین اے جے کے کونسل اختیا رات کا استعمال کو خود آئین پاکستان کی خلاف ورزی قرار دیا اور کہا کہ وزیراعظم پاکستان آزادکشمیر کے عوام اور نہ ہی قانون ساز اسمبلی کو جوابدہ ہیں .آزادکشمیر کا ایک نیا آئین وقت کی ضرورت ہے آئین

 میں ترامیم کے بعد آزادکشمیر کو مقبوضہ کشمیر کے عوام کیلئے رول ماڈل بنایا جا سکتا ہے۔
 

مظفرآباد( پی ایف پی نیوز(وزیراعظم پاکستان چیئرمین کشمیر کونسل راجہ پرویز اشرف کی مظفرآباد آمد کے موقع پر سول سوسائٹی نے پاکستان کے زیر اھتمام کشمیر کے عبوری آئین ایکٹ1974کی اصل حالت میں بحال کرکے مقامی حکومت کے

 ا ختیارات میں اضافے کے حق میں اور کشمیر کونسل میں مبینہ کرپشن کے 
خلاف احتجاج کیا ۔
مظاہرہ میں صحافی ، تاجر، طلباء ، وکلاء اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ شامل تھے 
 
Comments