کشن گنگا پاور پاور پراجیکٹ : عالمی عدالت انصاف

posted Feb 24, 2013, 9:55 AM by PFP Admin   [ updated Feb 24, 2013, 10:19 AM ]

دونوں اداروں نے مشترکہ طور پر عالمی عدالت انصاف سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں اور زمینی و سائنسی حقائق کو سامنے رکھ کر فیصلہ کیا جائے تاکہ ریاست جموں و کشمیر کو بڑی ماحولیاتی تباہی سے بچایا جا سکے۔ پریس فار پیس اور کسان فورم کے عہدیداروں نے خبردار کیا ہے کہ اگر اس فیصلہ پر نظر ثانی نہ کی گئی اور حکومت پاکستان کی جانب سے موثر طریقے سے اس فیصلہ کے خلاف اپیل نہ کی گئی تو دونوں ادارے سول سوسائٹی کے ذریعے وادی نیلم اور آزاد کشمیر سمیت ملک گیر احتجاجی مہم شروع کریں گے ۔
پریس کانفرنس میں کہا گیا ہے کہ عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ زمینی اور سائنسی حقائق کے سراسر خلاف ہے اور یہ فیصلہ کنٹرول لائن کی دونوں اطراف کے کشمیریوں کے لئے ناقابل قبول ہے۔ دونوں اطراف پر ماحولیات اور قدرتی وسائل کے تحفظ کے لئے کام کرنے والے اداروں کو اس فیصلے کے خلاف مشترکہ جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے ۔ عالمی عدالت انصاف کی جانب سے بھارت کے حق میں فیصلہ کو پاکستان کی کمزور سفارت کاری اور وکالت کی خامیوں سے تعبیر کرتے ہوئے دونوں اداروں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت پاکستان اور قانون نافذ کرنے والے ادارے پاکستان کی جانب سے عالمی عدالت انصاف میں اس مقدمہ کی پیروی پر مامور افراد کے خلاف تحقیقات شروع کریں اور جماعت علی شاہ سمیت اس کیس میں ملوث تمام افراد پر غداری کا مقدمہ درج کیا جائے ۔ 
قیام امن اور انسانی ترقی کے لئے کام کرنے والے معروف ادارے ’’پریس فار پیس‘‘ اور آزاد کشمیر میں ماحولیات ، زراعت اور قدرتی وسائل کے تحفظ کے لئے کام کرنے والے ادارے’’ کسان فورم‘‘ نے کشن گنگا پاور پاور پراجیکٹ پر عالمی عدالت انصاف کی جانب سے بھارت کے حق میں فیصلے اور بھارت کو دریائے نیلم کا رخ موڑنے کی اجازت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے فیصلے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور اسے انصاف کا قتل اور ریاست جموں وکشمیر کے قدرتی ماحول ،جنگلات اورزراعت کی تباہی کا پیش خیمہ قرار دیا ہے ۔ اٹھمقام میں ایک پریس کانفرنس کے دوران پریس فار پیس کے مرکزی ترجمان جلال الدین مغل اور کسان فورم کے چیئر مین جاوید اسداللہ نے کہا کہ متنازعہ کشن گنگا پراجیکٹ پر عالمی عدالت انصاف کی جانب سے بھارت کے حق میں فیصلہ عالمی نظام انصاف کے منہ پر ایک طمانچہ ہے اس فیصلہ کے ریاست جموں وکشمیر میں کنٹرول لائن کی دونوں جانب ، قدرتی ماحول، جنگلات، جنگلی حیات اور ذراعت پر تباہ کن اثرات مرتب ہوں گے ۔
Comments