غیرت کے نام پر قتل کا واقعہ تشویشناک ہے ۔ پریس فار پیس

posted Nov 4, 2012, 1:08 PM by PFP Admin   [ updated Nov 4, 2012, 1:09 PM ]

پریس فار پیس نے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع کوٹلی کے علاقہ کھوئی رٹہ میں 15سالہ انوشہ کے قتل میں ملوث اسکے والدین کو فوری طور پر سزاء دی جائے اور آئندہ کے لئے اس نوعیت کے واقعات کی روک تھام کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ واضح رہے کے دو روز قبل کھوئی رٹہ میں ظفر اقبال نامی شخص نے اپنی 15سالہ بیٹی کو اپنی بیوی کے ساتھ ملکر تیزاب ڈال کر قتل کر دیا تھا ۔ ظفر کو شبہ تھا کہ کہ اس کی بیٹی کے ایک مقامی نوجوان کے ساتھ ناجائز مراسم ہیں۔
خواتین اور بچوں پر گھریلیو اور جنسی طور پر ہراساں کرنے کے واقعات تو آزاد کشمیر میں روزمرہ زندگی کا حصہ بن چکے ہیں تاہم غیرت کے نام پر قتل کا یہ واقعہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے ۔ جس کی تحقیقات ہونا ضروری ہیں۔ 

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کی جانب سے خواتین اور بچوں کے تحفظ کے لئے قوانین بنائے جانے کے باوجود ان پر عملدرآمد نہ 
ہونا ریاستی اداروں کی ناکامی ہے ۔

غیرت کے نام پر قتل  کا واقعہ تشویشناک ہے ۔ پریس فار پیس

پائیدار امن اور انسانی ترقی کے لئے کام کرنے والے ادارے پریس فار پیس(پی ایف پی) نے آزاد کشمیر کے ضلع کوٹلی میں والدین کے ہاتھوں غیرت کے نام پر 15سالہ دوشیزہ کو تیزاب سے جلا کر قتل کرنے کے واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے قانون نافذ کرنے والے ریاستی اداروں سے مطالبہ کیا ہے کہ خواتین اور بچوں کے تحفظ کے قوانین پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔
 ایک پریس ریلیز میں ادارہ کے ترجمان جلال الدین مغل نے حالیہ دنوں میں آزاد کشمیر میں خواتین اور بچوں پرجنسی و جسمانی تشدد کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے جو کہ تشویشناک امر ہے ۔
Comments