شوہر کو نہ چھوڑا گیا تو اپنے بچوں کے ہمراہ خود کشی کروں گی: مہاجرکیمپ کی رہائشی خاتون

posted Oct 11, 2012, 11:55 PM by PFP Admin   [ updated Oct 12, 2012, 12:06 AM ]

 ہمیں نہیں بتایا گیا سی ایم ایچ میں انہیں حالت خراب ہونے پر لایا گیا تو میرے میاں کو ایجنسی والوں نے ٹارچر کیا آخر وہ کیا چاہتے ہیں اور دوسرے دن ایجنسی والے انہیں سی ایم ایچ سے کہیں اور لے گئے ہیں جہاں انکی جان کو شدید خطرہ ہے میں اپنے شوہر کے بغیر نہیں رہ سکتی میرے بچے ا ذیت میں مبتلا ہیں انہوں نے کہا کہ ہمیں ناکرہ گناہوں کی سزا نہ دی جائے ا افتخاراحمد چوہدری،ڈی جی آئی ایس آئی ظہیر السلام میرے بے گناہ شوہر کو رہا کرائیں ہم نے پاکستان کے لئے سب کچھ چھوڑا ہے ہمیں اسلام سے محبت کی سزا نہ دی جائے ۔
انھوں نے مزید کہاکہ میرے شوہر اپنے عزیز کی فوتگی پر گے تھے اور اس نے اپنا خاندان پاکستان اور تحریک آزادی پر قربان کیا ہے اور اس نے ایک مجاہد کے طور پر بھارتی فوج کو ناکوں چنے چبوائے1991میں بھارتی فوج کے سربراہ کے آر کرشنا نے اپنے دورہ کرناہ کے دوران 5لاکھ روپے اسکے سر کی قیمت مقرر کی جبکہ اسکے والد کے ناخن کھینچے گے اور موت کے گھاٹ اتارا گیا میرے شوہر نے پوری زندگی جہاد اور پاکستان کو دی 
 سکا صلہ یہ ملا کہ فوجی کیمپ کے پاس سے جب وہ رشتہ دار کی تعزیت کے بعد واپس آ رہے تھے انہیں اٹھا لیا گیا انکا موٹرسائیکل وہیں ہے جس پر اخرورت اور سبزیا ں موجود ہیں
مظفرآباد:  ایک مہاجرکیمپ کی رہائشی خاتون شہناز قاضی نے اپنے پانچ بچوں کے ہمراہ صحافیوں کو بتایا کہ میرے شوہر قاضی خوشحال کو وادی لیپہ سے گرفتار کیا گیا اور اسے دو ہتھکڑیاں لگا کر بیڈ نمبر ایک پر لٹایا 
گیا
میں اپنے شوہر سے بات کرنے گی تو ایجنسی والوں نے مجھ پر 
ذدوکوب کیا میرے شوہر کو دل کادورہ پڑا ہے سے ہسپتال سے غائب کر دیا گیا ۔ شہناز قاضی نے کہا کہ اگرمیرے شوہر کو نہ چھوڑا گیا تو پاکستان کی پارلیمنٹ کے سامنے اپنے بچوں کے ہمراہ خود کشی کروں گی میرے شوہر کی زندگی بچانے کیلئے صدر پاکستان ،چیف جسٹس پاکستان ڈی جی آئی ایس آئی ،انسانی حقوق کی تنظیمیں فیصلہ کن کردار ادا کریں ۔
Comments