تنازعہ کشمیر کا حل ناگزیر ہو چکا کشمیریوں کو اب مزید دھوکے میں نہیں رکھا جا سکتا ، ماروی میمن

تنازعہ کشمیر کا حل ناگزیر ہو چکا کشمیریوں کو اب مزید دھوکے میں نہیں رکھا جا سکتا ، ماروی میمن
ہٹیاں بالا 
 پارلیمانی کمیٹی برائے کشمیر کی سابق رکن و سابق ممبر قومی اسمبلی ماروی میمن نے کہا ہے کہ تنازعہ کشمیر کا حل ناگزیر ہو چکا ہے ۔ کشمیریوں کو اب مزید دھوکے میں نہیں رکھا جا سکتا ۔ کشمیری عوام کی خواہشات کو مدنظر رکھا جائے ۔ مقبوضہ کشمیر میں نہتے و معصوم کشمیریوں پر بھارتی ظلم و ستم عالمی برادری سمیت اقوام متحدہ کے لئے لمحہ فکریہ ہیں ۔ انسانی حقوق کی تنظیموں مقبوضہ وادی میں گمنام قبروں کی دریافت ، خواتین کی عصمت دری پر خاموشی سمجھ سے بالاتر ہے ۔ پاکستان بھارت مذاکرات میں بنیادی فریق کشمیریوں کو شامل کریں ۔ مقبوضہ وادی میں کٹھ پتلی حکومت کی جانب سے افسپا قانون کا ہٹایا جانا عمر عبداللہ اور اس کی کٹھ پتلی کابینہ کا اعتراف جرم ہے ۔ غلامی کی سیاہ رات کشمیریوں کی آزادی و خود مختاری بازو بازو سے ختم ہونے والی ہے ۔ لاکھوں شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔ یوم سیاہ کے موقع پر کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کے علاوہ پاکستانی قوم پر بتا دینا چاہتی ہے کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑے ہین ۔ ان خیالات کا اظہار سابق ممبر قومی اسمبلی ماروی میمن نے ہٹیاں بالا کی سماجی تنظیم ہیومن کیمونٹی ویلفیئر آرگنائزیشن کے زیر اہتمام ہٹیاں بالا ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ہٹیاں بالا آمد پر ماروی میمن کا ڈپٹی کمشنر چودھری فرید ، صاحبزادہ ذوالفقار عالم ، ایچ سی ڈبلیو او کے صدر سید احسان گیلانی ، سابق امیدوار اسمبلی سید اسرار ہمدانی ، خواجہ احمد کی قیادت میں سول سوسائٹی سمیت تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد نے استقبال کیا ۔ ریلی سے سابق ڈی جی آئی ایس آئی جنرل ( ر ) اسد درانی نے بھی خطاب کیا ۔ بعدازاں ماروی میمن کی قیادت میں سینکڑوں افراد نے شاہراہ سرینگر پر واقعہ لائن آف کنٹرول چکوٹھی پر دھرنا دیا ۔ جس میں چناری ، چکوٹھی کے عوام علاقہ کے علاوہ آزاد کشمیر بھر سے آئے ہوئے افراد نے شرکت کی ۔ دھرنے ختم کرنے کے بعد گورنمنٹ ہائی سکول چکوٹھی میں ماروی میمن کے اعزاز میں ایک پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا جہاں ماروی میمن کے علاوہ سابق ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی جنرل ( ر ) اسد درانی ، جموں و کشمیر پیپلزپارٹی کے صدر سردار خالد ابراہیم ، ماہر تعلیم تنویر لطیف ، پریس فارپیس کے ڈائریکٹر راجہ محمد وسیم ، میر عبدالطیف ایڈووکیٹ ، شوکت گنائی ، سیودی فیوچر کے صدر راجہ مہتاب اشرف ، خورشید عباسی سابق امیدوار اسمبلی اسرار ہمدانی ، انصاری نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کے خلاف مذمتی قرار دادیں بھی منظور کی گئیں ۔ جنرل ( ر ) اسد درانی نے کہا کہ جنوبی ایشیا میں قیام امن کے لئے تنازعہ کشمیر کا حل ضروری ہے ۔ مذاکرات کی میز پر کشمیریوں کی شمولیت کے بغیر تنازعہ رہے گا ۔ حکومت پاکستان کو چاہئے کہ ازسرنو پالیسی مرتب کی جائے اور جاندار موقف پیش کیا جائے ۔ سابق ممبر اسمبلی ماروی میمن نے کہا کہ پاک بھارت تعلقات میں تنازعہ کشمیر کو مقدم رکھا جائے اور اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کشمیریوں کی رائے کے مطابق حل کیا جائے ۔ ماروی میمن نے مزید خیال ظاہر کیا کہ بہت جلد مقبوضہ کشمیر کا دورہ کروں گی اور حریت قیادت سمیت معصوم و مظلوم کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کروں گی ۔ آزاد کشمیر کے نوجوان قدم بڑھائیں اور تحریک آزادی کو منطقی انجام تک پہنچانے میں اپنا کردار ادا کریں ۔
Comments