Category: رائٹرز

سمیع اللہ عزیز منہاس (آرکیٹکٹ)۔ محقق، مصنّف ، وادئ نیلم ۔ آزاد کشمیر

سمیع اللہ عزیز منہاس پیشے کے اعتبار سے آرکیٹکٹ ہیں – انھوں نے اپنے پیشہ ورانہ علم کو وادی نیلم کی تاریخ و ثقافت کے مخفی گوشوں کو مناظر عام پر لا کر ایک تاریخی کارنامہ سرانجام دیاہے -وہ ایک محقق اور لکھاری ہیں – اور صداۓ نیلم اور دیگر پلیٹ فارم کے ذریعے تحقیقی اور علمی سرگرمیوں کی سرپرستی اور قیادت کر رہے ہیں -وہ تاریخ اور ثقافت کےموضوعات  پر اخبارات اور جرائد میں لکھتے ہیں – ان کی ایک کتاب  نیلم سےناگ تک شائع ہو چکی ہے ۔

ناصر بیگ چغتائی صحافی ، اینکرپرسن، مصنف

ناصر بیگ چغتائ سینئر صحافی ہیں۔ اُن کی صحافت سے وابستگی کو تیس سال سے زائد ہو گئے ہیں۔ وہ انیس سو اسی کےآغاز میں صحافت سے وابستہ ہوئے اور مختلف اخبارات میں اہم پوزیشنز پر فائز رہے۔ اردو نیوز جدہ کے بانی ممبر اورایڈیٹر بھی رہے۔ مستقبل پر نظر رکھتے ہوئے دو ہزار دو میں پرنٹ سے الیکٹرونک میڈیا سے ناطہ جوڑا، اور جیو نیوز دبئی کی لانچنگ میں اہم کردار ادا کیا۔ اے آر وائی ون ورلڈ کے ہیڈ بھی رہے۔ ناصر بیگ چغتائی کو یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ وہ پاکستانیوں کے اس پہلے وفد میں شامل تھے جو بحیثیت صحافی مقبوضہ کشمیر گئے اور وہاں کےحالات کا مشاہدہ کیا۔  ناصر بیگ چغتائی کشمیر کاز  کے لیے کام انہوں نے سری نگر کے مشہور لال چوک اور سری نگر یونیورسٹی میں پروگرام بھی ریکارڈ کر کے نشرکیے۔ وہ دو سو سے زائد ٹی وی شوز کی میزبانی بھی کر چکے ہیں۔ اب تک پر ’’این بی سی آن لائن‘‘ ان کا مقبول ٹی وی شو تھا۔ جس میں فلسطین، کشمیر، عراق، افغانستان اور دنیا بھر کے اہم موضوعات پر بصیرت افروز اظہار خیال کیا۔اب بھی مختلف ٹی وی چینلز پر بطور مبصر انہیں اظہارِ خیال کے لیے طلب کیا جاتا ہے۔ ناصر بیگ چغتائی کے ناول “سلگتے  چنار “کا مختصر احوال  نریندر مودی حکومت نے پانچ اگست دو ہزار انیس کو مقبوضہ جموں و کشمیر سے متعلق اپنے آئین کا آرٹیکل 370 ختم کردیا۔ برہان الدین وانی کے قتل کے بعد سے جاری ظلم کی سیاہ رات مزید طویل ہو گئی۔ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو سوروز سے زائد گزر گئے، ابھی اس کے خاتمے کے کوئی آثار نہیں ہیں۔ لیکن کشمیر عوام کے جوش و خروش میں کوئی کمی نہیں آئی۔ نتیجتاً بھارتی حکومت کو کرفیو اٹھانے کی ہمت نہیں ہو رہی۔  اس صورتحال میں پاکستان کے مایہ ناز صحافی،معروف ٹی وی اینکر ناصر بیگ چغتائی ( جنہیں ان کے دوست اور فیض اٹھانے والے این بی سی کے نام سے پکارتے ہیں) کا جد و جہد آزادی کشمیر کے موضوع پر مبنی ناول ’’سلگتے چنار‘‘ شائع ہوا -ناول ’’سلگتے چنار‘‘ کا پہلا حصہ بھی ہفت روزہ’’اخبار جہاں ‘‘ میں قسط وار شائع ہوتا رہا۔  اور اس نے بے پناہ مقبولیت حاصل کی۔ قدرے فرصت نے ایک مرتبہ پھرناصر بیگ چغتائی کو علم و ادب کی جانب رجوع کرنے پر مائل کیا اور انہوں نے تحریر سے دوبارہ ناطہ جوڑنے کے عزم کااظہار کیا ہے۔ خبر سے طویل وابستگی اور کشمیر سے لگاؤ کے پس منظر میں ناصر بیگ چغتائی نے دو ہزار میں شائع ہونےوالے ناول ’’سلگتے چنار‘‘ کا دوسرا حصہ لکھنے کا فیصلہ کیا۔ جس میں کہانی حالیہ واقعات کے پس منظر میں آگے بڑھتیہے۔ ناول کے دونوں حصے ایک ساتھ فضلی بکس نے انتہائی خوبصورتی شائع کیے ہیں- –

سردارعارف شاہد شہید ، سیاسی رہنما ، مصنّف، آزاد کشمیر

عارف شاہد آل پارٹیز نیشنلسٹ الائنس کے سابق چیر مین اور نیشنل لبریشن کانفرنس کے صدر تھے۔ عارف شاہد ایک کشمیری قوم پرست رہنما کی حیثیت سے جانے جاتے تھے، وہ پاکستان اور بھارت دونوں ملکوں…

احسن عزیز انجنئیر، ادیب ، شاعر، میرپور

انجینئر احسن عزیز ایک بلند پایہ ادیب اور شاعر تھے ۔ انھوں نے انجنئیرنگ کی تعلیم میرپور میں حاصل کی – وہ طلبہ سیاست میں بھی متحرک تھے۔ انہوں نے نوجوانی میں ہی ایسی بلند پایہ کتابیں لکھی ہیں کہ انسان حیران رہ جاتا ہے ۔ احسن عزیز انجنئیر کی تصانیف  1۔تمہارا مجھ سے وعدہ تھا  2۔اجنبی کل اور آج 3۔اک فرض جسے ہم بھول گئے

جبار مرزا، تجزیہ نگار ، صحافی اور مصنف

 جبار مرزا سنیئر تجزیہ نگار ، صحافی اور مصنف ہیں – ’کشمیر کو بچا لو‘ جناب جبار مرزا کی تصنیف/ تالیف ہےاس میں شامل زیادہ تر مضامین ان کے تحریر کردہ ہیں۔ کتاب دیدہ زیب چاررنگوں والے آرٹ پیپر پر شائع کی گئی ہے۔ سرورق کشمیر میں جاری جبر کی تصویر دکھا رہا ہے۔پسِ ورق ڈاکٹر عبدالقدیر خان (معروف سائنسدان) کا تحریر کردہ ہے۔ جب کہ کتاب کےفلیپ پر محمودگامی کی شہرہ آفاق نظم ’کریومنزجگرس‘ اور جناب رجب طیب اردگان (صدر جمہوریہ ترکی) کا تعارف لکھاگیاہے۔  کیوں کہ انھوں نے کشمیر کے مسئلے پر پاکستان کی کھل کر حمایت کی ۔کتاب 324 صفحات پر مشتمل ہے اور اسےشہریار پبلی کیشنز اسلام آباد نے 21اپریل2020 کو جب شائع کیا تومحصوروادی کے لاک ڈاﺅن کو261 دن گزرے تھے-

یاسر ارشاد – ترقی پسند سماجی کارکن، مصنّف

یاسر ارشاد آزاد کشمیرکے ایک ترقی پسند سیاسی اور سماجی کارکن ہیں -وہ بائیں بازو کی فکر سے منسلک جرائد جہدوجہد اور مارکسسٹ  میں طبقاتی تقسیم ، محنت کشوں کے حقوق وغیرہ  پر لکھتے ہیں- یاسر ارشاد کی تصانیف  کشمیر کی آزادی ایک سوشلسٹ حل۔

غلام الثقلین نقوی ، افسانہ نگار، ناول نگار، سفرنامہ نگار

غلام الثقلین نقوی کے حالات زندگی غلام الثقلین نقوی 12 مارچ، 1922ء کو چوکی ہنڈن، نوشہرہ، ریاست جموں و کشمیر میں پیدا ہوئے-انہوں نے مرے کالج سیالکوٹ سے گریجویشن، سینٹرل کالج لاہورسے بی ٹی کی ڈگریاں حاصل کیں اور پنجاب یونیورسٹی سے ایم اے کا امتحان پاس کرنے کے بعد وہ تعلیم کے شعبے سے وابستہ ہوئے۔ نومبر 1968ءسے اپنی سبکدوشی تک وہ گورنمنٹ کالج لاہور سےمنسلک رہے۔ ادبی خدمات غلام الثقلین نقوی بیک وقت افسانہ، سفرنامہ، مضامین اور ناول کی صنف میں طبع آزمائی کی لیکن وہ افسانہ نگاری کی وجہ سے زیادہ مشہور ہوئے۔ وہ حلقہ ارباب ذوق سے وابستگی رکھتے تھے۔ ان کی تصانیف میں افسانوں کے مجموعے بندگلی، شفق کے سائے، سرگوشی، نقطے سے نقطے تک اور مضامین کا مجموعہ اک طرفہ تماشا ہے، ناولوں میں بکھری راہیں، میراگاؤں، ناولٹ چاند پور کی نینا ، شیر زمان اور سفرنامہ چل بابا اگلے شہر کے نام سرفہرست ہیں۔ غلام الثقلین نقوی کی تصانیف افسانوی مجموعے دھوپ کا سایہ سرگوشی گلی کا گیت نقطے سے نقطے تک لمحے کی دیوار نغمہ اور آگ بند گلی شفق کے سائے…

عبدالرشید ترابی، سیاستدان، مذہبی رہنما، مصنّف، باغ آزاد کشمیر

عبدالرشید ترابی جماعت اسلامی آزاد کشمیر کے سابق امیر اور چئیرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی ہیں – وہ قومی اور ملی مسائل پراخبارات میں کالم لکھتے ہیں- ان کی متعدد کتابین شائع ہو چکی ہیں- تصنیف

محمد انور عباسی ، ماہرِ اقتصادیات، مصنف باغ آزادکشمیر

محمد انور عباسی مصنف اور ماہر اقتصادیات ہیں۔1940 نیلا بٹ، ضلع باغ، آزاد کشمیر میں پیدا ہوئے، یہیں سے میٹرک کا امتحان پاس کرنے کے بعد حصول تعلیم کے لیےکراچی گئے۔1963  میں کراچی یونیورسٹی سے بی کام  ٓنرز اور اس کے بعد اسی یونیورسٹی سے ایم اے معاشیات اور بعد میں ایم اے اسلامیات کی سندیں حاصل کیں۔بعد ازاں سعودی عرب میں سعودی ہولندی بینک  میں بیس سال تک چیف اکائونٹنٹ کی حیثیت سے کام کیا۔ وہاں سے ریٹائرمنٹ کے بعد اسلام آباد میں رہائش پذیر ہیں  محمد انور عباسی کی تصانیف  ” متاعِ شام سفر” خود نوشت سوانح عمری  بنک انٹرسٹ منافع یا ربا

ندیم پہانوڑی

شاعر، گلوکار، پہاڑی زبان، راولاکوٹ ندیم پہانوڑی شاعر اور گلو کار ہیں۔ وطن سے محبت ان کی پہاڑی شاعری کا حوالہ ہے۔ ان کا تعلق  خطہ جنت نظیر وادی پرل راولاکوٹ کے نواح میں واقع ایک خوبصورت گاؤں بن بہک سے ہے ۔ان کا اصل نام  ندیم احمد اعوان ہے ۔ شاعری کے موضوعات اپنی مادر وطن کی غلامی او ر محکومی کا درد ، ماں بولی پہاڑی سے محبت اورتلاش معاش میں وطن سے دور جا کر بسنے والوں کےجذبات کی عکاسی ان کے لکھے اور گاۓ ہوۓ پہاڑی نغموں اور گیتوں میں کی گئی ہے ۔ مجموعہ کلام 2004 کے وسط میں ان کاایک پہاڑی مجموعہ “دہلے نے پہانوڑے “منظر عام پر آیا تھا۔جس کے بعد دوست احباب نے ندیم اعوان کو ندیم پہانوڑی کے لقب سے پکارنا شروع کر دیا(پہانوڑی) پہاڑی زبان کا لفظ ہے،  اس کے معنی ہیں خیالی یعنی ایسی باتیں سوچنے والا جو صرف خواب اور خیالوں میں ہی انسان سوچ سکتا ہے ۔ انھوں نے ابتدائی تعلیم گورنمنٹ مڈل اسکول بن بہک سے پرائمری تک حاصل کی…

مریم مجید ڈار

افسانہ نگار، شاعرہ، ضلع حویلی آزاد کشمیر مریم مجید ڈار افسانہ نگار اور شاعرہ ہیں ۔ ان کا  تعلق آزاد کشمیر کے ایک دور افتادہ ضلع حویلی سے ہے۔ انھوں نے پلانٹ سائنسز میں ایم فل کیا ہے۔ افسانوں پر مشتمل پہلی کتاب "سوچ زار” مئی 2019 میں شائع ہوئی ہے ، جس میں بیس سے زائدافسانے شامل ہیں ۔ اسے فکشن ہاوس نے شائع کیا ہے۔ اس کے علاوہ دو مزید کتابیں” بے چہرہ” اور” برگد” زیر تکمیل ہیں۔